محمد احسن قریشی

سویرا: ملک کے تمام حصّوں سے “حقوق دو” کی صدائیں آرہی ہیں۔

عظیم: ہاں! ریاست کو ان آوازوں کو سنجیدگی سے سنا ہوگا۔

سویرا: مسائل تو تمھاری قوم کے بھی کم نہیں۔

عظیم: ہاں ہم پر تو کوٹہ سسٹم کی مار ہے۔

سویرا :اب تمہاری قوم کو بھی اپنے حقوق کے لیے آواز اٹھانی چاہیے۔

عظیم :لیکن حقوق کی جدوجہد کے ساتھ ہمیں ایک اور غرض کی خاطر بھی میدان عمل میں آنا ہوگا۔

سویرا :کس غرض کی خاطر؟

عظیم : شناخت! مہاجر شناخت کو تسلیم کروانے کی خاطر۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here